image

image

23 دسمبر کو این اے 154 ضلع لودھراں میں ضمنی الیکشن ھونے جا رہے ھیں ..ایک طرف مسلم لیگ (ن)کے صدیق خان بلوچ اور دوسری طرف پی ٹی آءی کے جہانگیر خان  ترین ھے..
صدیق خان کے زاءچے میں جو ستاروں کی پوزیشن ھے اس کے مطابق..صدیق خان  کا 25 سا لہ خوشبختی کا دور زوال پزیر ھونے والہ ھے..ستاروں کی نحوست بڑھتی جا رہی ھے..دوست دشمن ھورہے ھیں اپنے عزیز جو کبھی بھت قریب تھے انکے روءیے میں تبدیلی آنی شروع ھو رہی ھے…لیکن ان کے زاءچے میں شمش کی پوزیشن بہت مضبوط ھے..جس کی وجہ سے  صدیق بلوچ  اپنے مخالفین کا سمنا بڑی جواں مردی سے کر رہے ھیں..کسی بھی لمحے حوصلہ نہیں ھار رہے..لیکن 15 دسمبر کے بعد زحل کی نحس نظر زاءچے پر نحس اثرات ڈالتی نظر آرہی ھے…جس کے نتاءج بھت بھیانک ھوسکتے ھیں..اور ضمنی الیکشن میں شکست کا باعث بن سکتے ھیں..
دوسری طرف جہانگیر ترین کے زاءچے میں جو ستاروں کی پوزیشن ھے..اس میں بھت سعد نظرات ھیں..مشتری کی سعد نظر کی وجہ سے جہانگیر ترین کو بھت سی خوشخبریاں ملنے والی ھیں.نءے تعلقات بنیں گے دوستوں میں اضافہ ھوگا اور دوستوں سے فاءیدہ پہنچے گا.ستاروں کی یہ پوزیشن ضمنی الیکشن میں بہت فاءدہ دے گی…اور لگتا ایسے ھے کہ ترین صاحب کامیابی سے ہمکنار ھونگے…
زمینی حقاءق اگر دیکھیں تو لودھراں کی عوام جہانگیر ترین کا ساتھ دے رہی ہے.زیادہ تر عوامی نماءندے ترین سے جا ملے ھیں.
دوسری طرف صدیق بلوچ کے حماءتی اور عوامی نماءندے بہت کم ساتھ دے رہے ھیں..مگر یہ بھی حقیقت ھے کہ گورمنٹ پراءمنسٹر اور چیف منسٹر صدیق بلوچ کا بھرپور ساتھ دے رہے ھیں… لیکن جہانگیر ترین صاحب بھی بھت محنت کرہے ھیں…دیکھیں اونٹ کس کروٹ بیٹھتا ھے…..

 

Advertisements